Post

وُہ مِرا دوست مِرے حال سے آگاہ تو ہو

وُہ مِرا دوست مِرے حال سے آگاہ تو ہو
نا سہی سچ میں مگر خواب میں ہمراہ تو ہو

کُچھ اثر اُن پہ مِری آہ و فُغاں کا یارو
ہو نہ ہو، پِھر بھی مِرے لب پہ کوئی آہ تو ہو

کب کہا میں نے تعلُّق وہ پُرانا ہو بحال
بس دِکھاوے کو فقط تُم سے کوئی راہ تو ہو

جو محبّت میں وفاؤں کو تڑپتا چھوڑے
پِِھر ترستا ہی رہے، پہلے اُسے چاہ تو ہو

میں نے کب اُس کی محبّت کا کِیا ہے اِنکار؟
اُس طرف جاتا کوئی راستہ ہو، راہ تو ہو

تُرش لہجے پہ کبھی غور کِیا ہے تُم نے
گرم جوشی نہ سہی دل میں مگر جاہ تو ہو

کیا ہُؤا چاند اگر اپنے تصرُّف میں نہِِیں
شک نہِیں اِس میں مِرے واسطے تُم ماہ تو ہو

آج کُچھ ایسا ادا کرنا پڑے گا کِردار
ہو نہ ہو کُچھ بھی مگر دوست خُود آگاہ تو ہو

یہ وُہی خانہ بدوشوں کا قِبیلہ ہے رشِیدؔ
ڈیرہ ڈالے گا، وہاں کوئی چراگاہ تو ہو

رشِید حسرتؔ

shararat ka maza

Shayari By

rashida thi yun to badi nek ladki
magar us mein ye ek aadat buri thi

wo har chiz ko chhuti aur chhedti thi
ye baat us ki ghutti mein goya thi [...]

shararat ka maza

Shayari By

rashida thi yun to badi nek ladki
magar us mein ye ek aadat buri thi

wo har chiz ko chhuti aur chhedti thi
ye baat us ki ghutti mein goya thi [...]

diwali 1958

Shayari By

dipawali aati hai jo har sal phir aai
paigham masarrat ka jahan ke liye lai

maqsud hai kuchh jashn bhi kuchh is se bhalai
barsat ka mausam gaya lazim hai safai [...]

">

Don't have an account? Sign up

Forgot your password?

Error message here!

Error message here!

Hide Error message here!

Error message here!

OR
OR

Lost your password? Please enter your email address. You will receive a link to create a new password.

Error message here!

Back to log-in

Close